Home » Interesting News » #paksa #paksa.co.za اپنے یونیورسٹی پروفیسر کے مقبرے میں رات گزارنے کے لئے تمام طالب علم پاگل ہوگئے، مقابلہ لگ گیا، ایسا کیوں؟ جانئے

#paksa #paksa.co.za اپنے یونیورسٹی پروفیسر کے مقبرے میں رات گزارنے کے لئے تمام طالب علم پاگل ہوگئے، مقابلہ لگ گیا، ایسا کیوں؟ جانئے

لیکسنگٹن (نیوز ڈیسک) امریکا کی ٹرانسلوینیا یونیورسٹی میں ایک آنجہانی پروفیسر کی یاد میں ہر سال ایک ایسا کام کیا جاتا ہے جو بظاہر تو کسی کو بھی پسند نہیں ہونا چاہیے مگر حقیقت یہ ہے کہ طلباءاسے کرنے کے لئے انتہائی بے تاب ہوتے ہیں۔ یونیورسٹی میں ہر سال آنجہانی پروفیسر کے نام سے منسوب ہفتہ منایا جاتا ہے ۔ یہ ہفتہ انیسویں صدی سے تعلق رکھنے والے پروفیسر کانسٹن ڈین رفینیک کے نام سے منسوب ہے، جس کے اختتام پر منتخب طلباءکو پروفیسر کے مقبرے میں رات گزارنی ہوتی ہے۔

ویب سائٹ کے مطابق یونیورسٹی میں ایک داستان مشہور ہے کہ پروفیسر رفینیک نے یونیورسٹی سے رخصت ہوتے وقت اس ادارے کو بددعا دی تھی جس کی وجہ سے ہر سات سال بعد یونیورسٹی میں کوئی سانحہ پیش آتا ہے۔ سب سے پہلا سانحہ یونیورسٹی کے اس صدر کے ساتھ پیش آیا جسے پروفیسر رفینیک نے خاص طور پر بددعا دی تھی۔ وہ زرد بخار کا شکار ہوگیا اور چند دنوں میں ہی دم توڑ گیا۔ اس کے بعد ہی تقریباً ہر سات سال بعد یونیورسٹی میں کوئی پریشان کن واقعہ پیش آتا ہے۔ کئی بار یونیورسٹی میں ایسی بیماریاں پھوٹ پڑی ہیں جو کہ باقی شہر میں نہیں دیکھی گئیں۔

یونیورسٹی کے طلبا کا کہنا ہے کہ وہ ہر سال ایک رات پروفیسر رفینیک کے مقبرے میں گزارتے ہیں، جو کہ یونیورسٹی میں ہی واقع ہے۔ اس مقبرے میں رات گزارنے کا موقع ہر کسی کو نہیں ملتا بلکہ اس کے لئے ہفتہ بھر مقا بلے جاری رہتے ہیں جن کے دوران طلبا کو مختلف سرگرمیوں میں شمولیت کرنا ہوتی ہے۔ بالآخر چار کامیاب طلبا کا انتخاب کیا جاتا ہے جو پروفیسر کے مقبرے میں ایک رات گزارتے ہیں۔ یونیورسٹی طلبا کا کہنا ہے کہ پروفیسر رفینیک کے مقبرے میں رات گزارنے کا مقصد ان سے یہ درخواست کرنا ہے کہ وہ یونیورسٹی کو دی گئی بددعا واپس لے لیں۔

Check Also

#paksa #paksa.co.za چینی انجینئر رائیونڈ سے پسند کی لڑکی بیاہ کر لے گیا

لاہور، رائیونڈ (ویب ڈیسک) چینی انجینئر رائے ونڈ سے پسندکی لڑکی بیاہ لے گیا ،شادی …