Home » Interesting News » #paksa #paksa.co.za بچوں کو بلڈ کینسر کیوں ہوتا ہے؟ بالآخر سائنسدانوں نے سب سے بڑی وجہ ڈھونڈ لی

#paksa #paksa.co.za بچوں کو بلڈ کینسر کیوں ہوتا ہے؟ بالآخر سائنسدانوں نے سب سے بڑی وجہ ڈھونڈ لی

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کم عمر بچوں کو خون اور ہڈیوں کے گودے کا کینسر لاحق کیوں ہوتا ہے؟ سائنسدان ایک صدی سے زائد عرصے سے اس راز سے پردہ اٹھانے کی کوشش کر رہے تھے جس میں اب انہیں کامیابی مل گئی ہے۔ ویب سائٹ  کے مطابق انسٹیٹیوٹ آف کینسر ریسرچ لندن کے پروفیسر میل گریویس نے اپنی تحقیق میں یہ پتا چلایا ہے ۔پروفیسر گریویس نے اس تحقیق میں گزشتہ 30سال کے دوران تخلیق ہونے والے میڈیکل لٹریچر سے مطلوبہ تحقیقات کے نتائج اور پوری دنیا کے سائنسدانوں سے ڈیٹا اکٹھا کیا۔ اس دوران انہوں نے جینیات، ایپڈیمیالوجی، امیونولوجی، سیلولر بائیولوجی پر تحقیق کی۔

نتائج میں پروفیسر گریویس نے بتایا کہ ”بچوں میں ’لیوکیمیا‘ (خون اور ہڈیوں کے گودے کا کینسر)ہونے کی ممکنہ وجوہات میں ماحول میں پائے جانے والے خطرناک کیمیکلز، آئیونائزیشن پیدا کرنے والی شعاعیں، برقی مقناطیسی لہریں اور ہائی وولٹیج بجلی کی تاریں شامل ہیں۔لیوکیمیا کے بارے میں یہ واضح ہو گیا ہے کہ یہ کئی طرح کی انفیکشنز سے پیدا ہوتا اور پھیلتا ہے۔ ایسے بچوں کے اس کا شکار ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں جن کا مدافعتی نظام کمزور ہو۔جب مدافعتی نظام بچے کی زندگی کے پہلے سال میں بیکٹیریا اور جراثیموں کے خلاف مناسب مزاحمت نہیں کر پاتا تو اس کو لیوکیمیا لاحق ہونے کے امکانات بہت بڑھ جاتے ہیں۔اس میں ہمارے آج کے صفائی ستھرائی کے معمول کا بھی عمل دخل ہے۔ آج ہم کئی طرح کی جراثیم کش ادویات استعمال کرتے ہیں اوربچوں کو بھی بیکٹیریا سے بچانے کے لیے کئی طرح کی کریمیں اور لوشن وغیرہ استعمال کرواتے ہیں۔ اس سے یہ ہوتا ہے کہ ان کے جسم سے اچھے بیکٹیریا بھی ختم ہو جاتے ہیں۔“ پروفیسر گریویس کا مزید کہنا تھا کہ ”بچے کی پیدائش کے بعد اس جسم پر جراثیموں اور بیکٹیریا کی ایک مناسب مقدار موجود ہونی چاہیے ۔ اس سے اس کے مدافعتی نظام کو پتا چلتا ہے کہ اسے ان جراثیموں کے ساتھ کیسے نمٹنا ہے۔ ہم بچوں کو اس قدر صاف ستھرا رکھتے ہیں کہ ان کا مدافعتی نظام یہ کام سیکھ ہی نہیں پاتا اور نتیجتاً ان کے لیوکیمیا سمیت کئی دیگر امراض کا شکارہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں کیونکہ ان کا مدافعتی نظام بیکٹیریا اور جراثیموں سے نمٹنا جانتا ہی نہیں ہوتا۔ یہی وجہ ہے کہ آج کے ترقی یافتہ ممالک کے بچوں میں لیوکیمیا بہت زیادہ پایا جاتا ہے۔ اس کے برعکس ترقی پذیر اور غریب ممالک میں بچوں کو یہ مرض لاحق ہونے کی شرح بہت کم ہے۔ اس کی ایک بڑی وجہ یہی ہے کہ ان ممالک کے بچے پیدائش کے بعد ایسے ماحول میں رہتے ہیں جہاں وہ جراثیموں اور بیکٹیریا کے نشانے پر ہوتے ہیں اور ان کا مدافعتی نظام ان کے خلاف مزاحمت سیکھ جاتا ہے۔“

 

Check Also

#paksa #paksa.co.za چینی انجینئر رائیونڈ سے پسند کی لڑکی بیاہ کر لے گیا

لاہور، رائیونڈ (ویب ڈیسک) چینی انجینئر رائے ونڈ سے پسندکی لڑکی بیاہ لے گیا ،شادی …