Home » Interesting News » ’آج کے بعد صرف لال رنگ کے کپڑے پہنوں گی‘ داعش کی قید سے رہائی پانے والی خاتون نے اعلان کر دیا ،وجہ کیاہے ؟جان کر آپ کو بے حد حیرت بھی ہوگی اور افسوس بھی ‎‎

’آج کے بعد صرف لال رنگ کے کپڑے پہنوں گی‘ داعش کی قید سے رہائی پانے والی خاتون نے اعلان کر دیا ،وجہ کیاہے ؟جان کر آپ کو بے حد حیرت بھی ہوگی اور افسوس بھی ‎‎

redدمشق (مانیٹرنگ ڈیسک) روسی حمایت کے ساتھ پیش قدمی کرنے والی شامی افواج کو داعش کے خلاف جن علاقوں میں کامیابی مل رہی ہے وہاں ایک انتہائی دلچسپ و رنگین تبدیلی بھی دیکھنے میں آرہی ہے۔ داعش کے زیر قبضہ علاقوں میں خواتین کو زبردستی برقعہ پہنایا جاتا تھا اور جب بھی کوئی خاتون گھر سے باہر نکلتی تو عموماً سیاہ رنگ کا برقعہ ضرور پہنتی تھی۔ شامی افواج کی فتوحات کے بعد داعش کئی علاقے چھوڑنے پر مجبور ہوچکی ہے اور ان علاقوں کی خواتین نے آزادی ملتے ہی سیاہ رنگ کو اپنی زندگی سے نکال باہر کیا ہے اور تیز سرخ رنگ کے ملبوسات پہن کر اپنی آزادی کا جشن منارہی ہیں۔
اخبار دی انڈی پینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق مانبج شہر کے علاقہ ابوقلقال میں خواتین نے آزادی کا جشن مناتے ہوئے خوشی کے نعرے بلند کئے۔ اس موقع پر خدیجہ ابوالمتیع نامی کرد خاتون نے بتایا کہ وہ ساری عمر کے لئے سرخ لباس پہننے کا عہد کرچکی ہے۔ خدیجہ کا کہنا تھا کہ داعش کی حکمرانی میں اسے زبردستی سیاہ لباس پہنایا گیا، اور اب آزاد ہونے کے بعد وہ اپنی تمام عمر اپنے پسندیدہ سرخ لباس میں گزارے گی۔ اس موقع پر دیگر خواتین نے بھی رنگین ملبوسات پہن رکھے تھے جن میں گلابی اور سرخ رنگ نمایاں ترین تھا۔
واضح رہے کہ داعش کے زیر قبضہ علاقوں میں لباس کے متعلق جاری کئے گئے احکامات کی خلاف ورزی کرنے والی خواتین کو سخت سزائیں دینے کی خبریں تواتر سے سامنے آتی رہی ہیں۔ اے آر اے نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق جنوری میں ایک 21 سالہ لڑکی کو لباس کے متعلق دئیے گئے احکامات کی خلاف ورزی پر تشدد کرکے موت کے گھاٹ اتاردیا گیاتھا۔ داعش سے آزادہونے والے علاقوں کی خواتین کا کہنا ہے کہ تشدد اور خوف ان کی زندگی کا حصہ بن چکا تھا اور اب انہیں آزادی ملی ہے تو وہ اپنی خوشی کا اظہار اپنے من پسند لباس پہن کر کررہی ہیں۔

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …