Home » Interesting News » ان مسلم خواتین کے چہروں پر جوانی میں ہی یہ تصاویر کیوں بنوادی جاتی ہیں، عجیب و غریب روایت کے پیچھے چھپی انتہائی حیران کن وجہ جانئے

ان مسلم خواتین کے چہروں پر جوانی میں ہی یہ تصاویر کیوں بنوادی جاتی ہیں، عجیب و غریب روایت کے پیچھے چھپی انتہائی حیران کن وجہ جانئے

news-1451398395-2340_large

الجیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) شمالی افریقہ کے ملک الجزائر میں تقریباً سبھی بوڑھی عورتوں کے چہروں پر تصاویر اور نقش و نگار بنے ہوئے ہیں۔ ایک وقت میں الجزائر میں یہ رواج کسی قانون کی طرح لاگو تھا کہ تمام عورتیں اپنے چہرے پر ٹیٹو بنواتی تھیں۔ اس کی عجیب و غریب وجہ یہ تھی کہ ان عورتوں کا عقیدہ تھا کہ ٹیٹو بنوانے سے وہ پہلے سے زیادہ خوبصورت نظر آئیں گی۔برطانوی اخبار ”ڈیلی میل“ کی رپورٹ کے مطابق 106سالہ فاطمہ ترناﺅنی کا کہنا تھا کہ یہ ہمارے زمانے میں قانون تھا،ہمیں خوبصورت نظرآنے کے لیے ٹیٹو بنوانے پڑتے تھے۔ اس لیے میں نے بھی بنوائے۔

رپورٹ کے مطابق اب ملک میں اسلامی تعلیمات کا شعور بیدار ہونے پر چہرے پر تصاویر بنانے کا رواج ترک ہو چکا ہے اور آج کے لوگ ان بوڑھی خواتین کو کہتے ہیں کہ چہرے پر تصاویر بنانا گناہ ہے۔ اب وہ بوڑھی خواتین شرمندگی کی زندگی گزار رہی ہیں اور اس گناہ سے توبہ کرتی رہتی ہیں جو وہ لاعلمی میں کر چکی ہیں۔73سالہ عائشہ دجیلال کا کہنا ہے کہ ”میں نے اپنے چہرے پر اس وقت ٹیٹو بنوائے جب میں 25سال کی تھی تاکہ میں دوسری لڑکیوں سے زیادہ خوبصورت نظر آ سکوں۔ آج میں اپنے اس فیصلے پر پچھتاتی ہوں۔“
74سالہ دجینا بینزہرا کا کہنا تھا کہ جب میں 9سال کی تھی تب میری ماں نے زبردستی میرے چہرے پر ٹیٹو بنوائے۔ وہ چاہتی تھی کہ میں خوبصورت نظر آﺅں۔ میری ماں کہتی تھی کہ میری عمر کی تمام لڑکیوں کے چہرے پر ٹیٹو ہیں۔مجھے آج بھی یاد ہے کہ یہ بہت تکلیف دہ عمل تھا اور میں ٹیٹو بننے کے دوران مسلسل روتی رہی تھی۔“ آج دجینا کے ٹیٹو مدھم ہو چکے ہیں اور اس کے چہرے کی جھریوں میں چھپ چکے ہیں مگر اس کا کہنا ہے کہ مجھے آج بھی پچھتاوا ہوتا ہے کہ میں نے اپنی ماں کو ایسا کرنے کی اجازت کیوں دی۔

Check Also

#paksa #paksa.co.za چینی انجینئر رائیونڈ سے پسند کی لڑکی بیاہ کر لے گیا

لاہور، رائیونڈ (ویب ڈیسک) چینی انجینئر رائے ونڈ سے پسندکی لڑکی بیاہ لے گیا ،شادی …