Home » Interesting News » اپنی ایک سالہ بیٹی کو سمندر کنارے مرنے کیلئے کیوں چھوڑدیا؟ مقدمے کی سماعت کے دوران ماں نے ایسی وجہ بتادی کہ کمرہ عدالت میں سکتہ چھاگیا، سب کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

اپنی ایک سالہ بیٹی کو سمندر کنارے مرنے کیلئے کیوں چھوڑدیا؟ مقدمے کی سماعت کے دوران ماں نے ایسی وجہ بتادی کہ کمرہ عدالت میں سکتہ چھاگیا، سب کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

samandar

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) فرانس میں ایک سنگدل ماں نے اپنی 15ماہ کی بیٹی کو رات کے اندھیرے میں سمندر کنارے مرنے کے لیے چھوڑ دیاجس کی لاش اگلی صبح ماہی گیروں کو سمندر میں تیرتی ہوئی ملی۔ جب بات عدالت میں پہنچی تو خاتون نے اپنے قبیح عمل کی ایسی وجہ بتائی کہ وہاں موجود ہر شخص سکتے میں چلا گیا اور سب کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے۔ 39سالہ فیبینے کیبو(Fabienne Kabou) نے بتایا کہ ”مجھ پر جادو کا اثر تھا، مجھے معلوم ہی نہیں تھا کہ میں اپنی ہی بیٹی کو قتل کر رہی ہوں۔ میں اس روز اپنی بیٹی کو لے کر پیرس سے ساحلی علاقے برک سر مر(Berck Sur Mer)گئی۔ وہاں میں نے اپنی بیٹی کو اپنا دودھ پلایا۔ اس کے ساتھ کھیلتی رہی۔ جب وہ سو گئی تو میں اسے لے کر سمندر کنارے گئی اور ریت پر اس جگہ لٹا دیا جہاں تک سمندر کا پانی آ رہا تھا۔ میری بیٹی بالکل خاموش لیٹی رہی، اس نے بالکل حرکت نہ کی۔ مجھے لگا کہ پانی میری بیٹی کو ڈھانپ لے گا۔ اس کے بعد میں نے واپس دوڑ لگا دی۔ جب میں گھر واپس آئی تو مجھے اس کا افسوس تک نہ تھا۔ میں ایسے گھر میں داخل ہوئی جیسے شاپنگ سے واپس آئی تھی۔ یہ سب جادو کا اثر تھا۔ “ عدالتی ماہرنفسیات نے عدالت کو بتایا کہ ”خاتون ڈپریشن کی مریض ہے اور اس ڈپریشن کا تعلق اس بچی کی پیدائش ہی سے ہے۔ ممکنہ طور پر اسی ڈپریشن کی وجہ سے اس نے یہ بھیانک اقدام اٹھایا ہے۔“ رپورٹ کے مطابق کیبو پر قتل کے الزام کے تحت مقدمہ چل رہا ہے اور اگر اس کا جرم ثابت ہو گیا تو عمر قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

Check Also

کیا سیب نظام ہاضمہ کیلئے مفید ہے؟ #paksa #paksa.co.za

آپ نے یہ جملہ تو ہر ایک سے سُنا ہوگا کہ روزانہ ایک سیب کھائیں …