Home » Interesting News » ’اگر فوری یہ کام نہ کیا تو دنیا میں ایک بھی جاندار زندہ نہ بچے گا‘ سب سے خطرناک پیشنگوئی منظر عام پر

’اگر فوری یہ کام نہ کیا تو دنیا میں ایک بھی جاندار زندہ نہ بچے گا‘ سب سے خطرناک پیشنگوئی منظر عام پر

danger

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) زمین پر زندگی لگ بھگ 3ارب 70کروڑ سال سے موجود ہے۔ اس سارے عرصے میں ہم پانچ ایسے تباہ کن ارضیاتی واقعات کے بارے میں جانتے ہیں جن میں اگر تمام نہیں، تو جانوروں کی بہت زیادہ اقسام صفحہ ہستی سے مٹ گئیں۔ ان پانچ واقعات میں سب سے آخری عالمی تباہی آج سے لگ بھگ 6کروڑ60لاکھ سال قبل ہوئی جس میں ڈائنوسارز اور دیگر ان گنت جانوروں کی نسلیں ختم ہو گئیں۔ اب ایک بار پھر سائنسدانوں کی بہت بڑی تعداد وثوق کے ساتھ کہہ رہی ہے کہ ہماری زمین اب بہت جلد 6ویںتباہ کن ارضیاتی واقعے سے دوچار ہونے جا رہی ہے جس میں زمین پر موجود بیشتر مخلوقات صفحہ¿ ہستی سے مٹ جائیں گی۔ سائنسدان اس کی وجہ زمینی ماحول پر بڑھتے ہوئے انسانی اثرات کو قرار دے رہے ہیں۔

اے بی سی نیوز کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ چھٹی ممکنہ تباہی پہلے آنے والی تباہیوں سے مختلف اور زیادہ خطرناک ہو گی جس میں اربوں جانور اور درخت تباہ ہو جائیں گے۔ انسانوں کی ماحول پر اثرانداز ہونے والی سرگرمیوں کے باعث بہت سے جانوروں کی نسلیں اس وقت خطرے سے دوچار ہو چکی ہیں۔ ڈبلیو ڈبلیو ایف کی 2016ءلیونگ پلانٹ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ صرف گزشتہ 4عشروں میں بعض زیرنگرانی ممالیہ جانوروں، پرندوں، مچھلیوں اور رینگنے والے جانوروں کی نسلیں اوسطاً58فیصد ختم ہو چکی ہیں۔ یہ نسلیں جوں جوں ختم ہوتی جا رہی ہیں اس کے ماحولیاتی اثرات ان سے جڑے دیگر جانوروں، پرندوں اور درختوں پر بھی مرتب ہو رہے ہیں جس سے پورے ایکوسسٹم میں بگاڑ آ رہا ہے۔ یہی ماحولیاتی بگاڑ اگر قابو نہ ہوا تو چھٹی ہولناک عالمی تباہی کا پیش خیمہ ثابت ہو گا۔تاہم سویڈن کے ماہرمعاشیات بی جارن لمبورگ سمیت بعض کا کہنا ہے کہ چھٹے ارضیاتی حادثے کے دعوے محض افواہیں ہیں جن کا مقصد دنیا میں خوف پھیلانا ہے۔

 danger
#paksa
#paksa.co.za

Check Also

وائی فائی سگنل کوبجلی میں تبدیل کرنے کا کامیاب تجربہ

بوسٹن:  امریکی ماہرین نے ایک خاص مٹیریل سے آلہ تیار کیا ہے جو وائرلیس انٹرنیٹ اوردیگر …