Home » Interesting News » باورچی نے اپنی نوجوان بیگم کو قتل کرکے اس کا گوشت پکاڈالا، بیگم کو اس کے بارے میں کیا شرمناک ترین بات معلوم ہوگئی کہ یہ انتہائی خوفناک کام کر ڈالا؟ جان کر آپ کے بھی گال لال ہوجائیں گے

باورچی نے اپنی نوجوان بیگم کو قتل کرکے اس کا گوشت پکاڈالا، بیگم کو اس کے بارے میں کیا شرمناک ترین بات معلوم ہوگئی کہ یہ انتہائی خوفناک کام کر ڈالا؟ جان کر آپ کے بھی گال لال ہوجائیں گے

cut

سڈنی (نیوز ڈیسک)قدرت نے انسان کو ایک حساس مخلوق پیدا فرمایا ہے جس کا دل بسا اوقات کسی کی معمولی سی تکلیف دیکھ کر بھی بے چین ہوجاتا ہے، لیکن حیرت ہے کہ شیطان اسی انسان کا دل اتنا سخت بھی کردیتا ہے کہ بھیانک ترین درندگی کا ارتکاب کرتے ہوئے بھی اسے ذرا تامل نہیں ہوتا۔ انڈونیشیائی نژاد باورچی مارکس وولکے بھی ایک ایسی ہی عبرتناک مثال ہے، جس نے آسٹریلوی شہر برسبن میں قیام کے دوران ٹوکے سے اپنی شریک حیات مایانگ پراسیتیو کے جسم کے ٹکڑے کئے اورپھر ان ٹکڑوں کو چولہے پر رکھ کر پکاتا رہا۔
آسٹریلیاکی ایک عدالت کو بتایا گیا کہ یہ اندوہناک واقعہ دو سال قبل پیش آیا۔ مایانگ اور مارکس برسبن شہر کے ایک فلیٹ میں مقیم تھے۔ ایک عرصے سے ان کے درمیان تعلقات کشیدہ تھے اور اکثر اوقات لڑائی بھی ہوجاتی تھی۔ دراصل مایانگ کو معلوم ہو گیا تھا کہ مارکس جسم فروشی کرتا تھا، لیکن اس نے اپنے خاندان سے یہ بات چھپا رکھی تھی۔ تین اکتوبر 2015ءکی رات ڈیڑھ بجے اسی بات پر آخری بار ان کی لڑائی ہوئی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اسی رات مایانگ کو قتل کیا گیا۔ بیوی کو قتل کرنے کے بعد مارکس بازار گیااور دستانے، بلیچ، برش، کوڑا ڈالنے والے لفافے اور پلاسٹک کا ایک ٹب خرید کر لایا۔ اس نے ٹوکے کے ساتھ مایانگ کے جسم کو چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں میں کاٹا اور پھر چولہے پر رکھ کر انہیں اُبالنا شروع کردیا۔ مایانگ کے جسم پر ٹوکا چلاتے ہوئے اس کا ایک ہاتھ بھی زخمی ہوگیا، جس کی مرہم پٹی کروانے کیلئے وہ ٹیکسی لے کر رائل برسبن ہسپتال گیا۔ اس نے ٹیکسی ڈرائیور کو بتایا تھا کہ پیاز کاٹتے ہوئے چھری اس کے ہاتھ پر لگ گئی تھی۔ ہسپتال میں ڈاکٹروں کو اس نے بتایا کہ وہ اپنی گرل فرینڈ کے ہاتھ سے چھری پکڑنے کی کوشش کررہا تھا کہ اسے زخم لگ گیا۔
پولیس کے مطابق جب وہ مایانگ کے جسم کے ٹکڑوں کو الیکٹرک سٹوو پر رکھ کر ابال رہا تھا تو ابلتا ہوا پانی برتن سے سٹوو کے اندر گر گیا جس کی وجہ سے شارٹ سرکٹ کے باعث پورے فلیٹ کی بجلی بند ہوگئی۔ اس نے بجلی بحال کروانے کیلئے بریڈ کوئن نامی ایک الیکٹریشن کو بلایا۔ جب الیکٹریشن بجلی ٹھیک کرنے کیلئے فلیٹ میں آیا تو انتہائی ناگوار اور شدید بدبو اس کی منتظر تھی۔ مارکس نے اسے بتایا کہ وہ سور کا گوشت پکارہا تھا جس کی وجہ سے گھر میں بدبو پھیلی ہوئی تھی۔
بعدازاں الیکٹریشن نے پولیس کو بتایا کہ اس نے گھر میں کیمیکل کی بوتلیں، ربر کے دستانے اور دیگر مشکوک چیزیں دیکھیں۔ اس کا کہنا تھا کہ وہ باتھ روم میں بھی گیا تھا لیکن اس وقت اسے معلوم نہیں تھا کہ وہاں پڑی واشنگ مشین میں مارکس کی اہلیہ کے جسم کے کچھ ٹکڑے، بازو اور سر پڑا تھا۔

cut

الیکٹریشن نے پولیس کو بتایا کہ اس نے بجلی ٹھیک کردی لیکن گھر سے نکلتے وقت بھی اسے اندازہ نہیں تھا کہ الیکٹرک سٹوو پر پڑے برتن میں کسی انسان کے پاﺅں اور ٹانگیں پک رہی تھیں۔ اس کا کہنا تھا وہ جیسے ہی فلیٹ سے نکلا اس نے بلڈنگ کے منیجر کو خبردار کیا کہ اس فلیٹ میں کچھ بھاری گڑبڑ ہے۔

بلڈنگ کے منیجر نے پولیس کو اطلاع کی، اور جب فلیٹ کی تلاشی لی گئی تو بھیانک جرم کی تفصیلات ایک ایک کرکے سامنے آتی گئیں۔ مارکس گھر کی پچھلی جانب سے فرار ہو گیا اور قریب ہی ایک کوڑا دان میں چھپ گیا۔ اس نے اپنے گلے اور بازو پر زخم لگا لئے تھے جن کے باعث کوڑا دان میں ہی اس کی موت ہو گئی۔

#paksa

#paksa.co.za

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …