Home » Interesting News » ”جنرل ضیا الحق جسے فرانسیسی بحریہ کا ایڈمرل سمجھ کر باتیں کررہے تھے دراصل وہ شخص۔۔۔“ سابق آمر کی زندگی کی ایک ایساواقعہ کہ جسے جان کر آپ کو ہنسی کا دورہ پڑجائے گا

”جنرل ضیا الحق جسے فرانسیسی بحریہ کا ایڈمرل سمجھ کر باتیں کررہے تھے دراصل وہ شخص۔۔۔“ سابق آمر کی زندگی کی ایک ایساواقعہ کہ جسے جان کر آپ کو ہنسی کا دورہ پڑجائے گا

لاہور (پاکستان) پیپلزپارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو کا تختہ الٹنے والے جنرل ضیا الحق کو اپنے معتمد خاص جنرل فیض علی چشتی پر بڑا اعتماد تھا اور وہ انہیں خاص مواقع پر ساتھ رکھتے تھے۔ جنرل چشتی نے ریٹائرمنٹ کے بعد جنرل ضیا الحق سے وابستہ اپنی یادداشتوں کا کئی جگہ ذکر کیا ہے۔ دیکھا جائے تو جنرل چشتی سے زیادہ جنرل ضیا الحق کی قابلیت اور اقدامات کو کوئی نہیں سمجھتا تھا۔ انہوں نے تو جنرل ضیا الحق کی ایک دلچسپ حماقت کا بھی ذکر کیا ہے ، وہ کہتے ہیں۔
”جنرل ضیا الحق کے ہمراہ ہم فرانس کے دورے پر گئے، وفد کے ارکان کو ایک اعلیٰ ہوٹل میں ٹھہرایا گیا۔ اسی شام جنرل ضیاءالحق کے دروازے پر دستک ہوئی، صدر مملکت نے دروازہ کھولا تو دیکھا کہ دروازے پر سفید وردی میں ملبوس ایک گورا کھڑا ہے جس کے کندھے اور سینے پر کافی تمغے لگے ہوئے تھے۔“

صدر مملکت نے اسے دیکھ کر فوراً تپاک سے ہاتھ ملایا اور بغل گیر ہوگئے، اسے اندر آنے کی دعوت دی۔ علیک سلیک اور خیر خیریت دریافت کرنے کے بعد صوفے پر بٹھایا اور فرانس کے قومی حالات اور فرانس پاکستان فوجی تعاون پر بات چیت شروع کی۔ چند منٹوں کے بعد گورے شخص نے کہا ”جناب مجھے آپ کی باتیں سمجھ نہیں آرہیں لیکن پھر بھی میرے لائق جو خدمت ہے وہ بتائیں میں حاضر ہوں“ جنرل ضیا الحق حیران ہوگئے اور اب اس شخص کا تعارف پوچھا جس پر گورا بولا ”جناب میں اس ہوٹل کا بیرا ہوں اور آپ کی سروس کے لئے آیا تھا، کوئی خدمت ہو تو بتائیے“

جنرل چشتی بیان کرتے ہیں کہ یہ سن کر صدر ضیا الحق بڑے شرمندہ ہوئے۔ اس گورے کو رخصت کیا اور بعد میںمَیں نے صدر مملکت سے پوچھا ”آپ نے اس بیرے کو کیا سمجھا تھا“
جنرل صاحب کہنے لگے ”میں سمجھا تھا فرانسیسی بحریہ کے ایڈمرل ملاقات کے لئے آئے ہیں“ اس کے بعد ہم دونوں ہنسی سے لوٹ پوٹ ہوتے رہے۔

 

#paksa

#paksa.co.za

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …