Home » Sports News » حارث سہیل ایک بار پھر انجری سے دوچار، ٹیم مینجمنٹ گھر واپس بھیجنے میں‌ مخمصے کا شکار

حارث سہیل ایک بار پھر انجری سے دوچار، ٹیم مینجمنٹ گھر واپس بھیجنے میں‌ مخمصے کا شکار

Captureکندھے کی انجری میں مبتلا بائیں ہاتھ کے مڈل آرڈربیٹسمین کووطن واپسی کی ہدایت بھی کی جا سکتی ہے ،ٹیم انتظامیہ اب تک ان کی پاکستان واپسی کے بارے میں حتمی فیصلہ نہیں کر سکی ہے ،چیف سلیکٹر ہارون رشید

کراچی(اسپورٹس ڈیسک)پاکستانی ٹیسٹ اور ون ڈے بیٹسمین حارث سہیل ایک بار پھر انجری سے دوچار ہو گئے ہیں اور ٹیم مینجمنٹ ہی نہیں سلیکٹرز بھی انہیں گھر واپس بھیجنے کیلئے مخمصے کا شکار ہیں،کندھے کی انجری میں مبتلا بائیں ہاتھ کے مڈل آرڈربیٹسمین کووطن واپسی کی ہدایت بھی کی جا سکتی ہے لیکن چیف سلیکٹر ہارون رشید کا یہ کہنا ہے کہ ٹیم انتظامیہ اب تک ان کی پاکستان واپسی کے بارے میں حتمی فیصلہ نہیں کر سکی ہے ،ڈاکٹروں کے مطابق انجری سے بحالی کیلئے دو ہفتے کا وقت درکار ہوگا مگرسلیکٹرز بھی کسی نتیجے پر نہیں پہنچ سکے کہ ابھرتے ہوئے بیٹسمین کو واپس طلب کرلیں یا پھر انہیں ون ڈے سیریز میں کھلانے کا چانس لیں کیونکہ ان کی موجودگی سری لنکا میں کئی لحاظ سے بے انتہا ضروری ہے ۔تازہ اطلاع یہ ہے کہ پاکستانی بیٹسمین حارث سہیل پریکٹس کے دوران کندھے کی انجری میں مبتلا ہو گئے ہیں جنہیں وطن واپس بھی طلب کیا جا سکتا ہے ۔ قومی چیف سلیکٹر ہارون رشید کا کہنا ہے کہ ٹیم انتظامیہ ابھی تک حارث سہیل کو گھر واپس بھیجنے کا فیصلہ نہیں کرسکی ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پریکٹس کے دوران حارث سہیل کے کندھے پر شدید چوٹ آئی ہے تاہم ٹیم انتظامیہ بہترین ڈاکٹرز سے ان کی انجری کے بارے میں رائے لے رہی ہے جس کے بعد جلد ہی فیصلہ کرلیا جائے گا کہ انہیں گھر واپس بھیج دیا جائے یا پھر وہ انجری کی بحالی تک سری لنکا میں ہی قیام کریں۔ واضح رہے کہ حارث سہیل حالیہ عرصے میں ٹیسٹ اور ون ڈے کرکٹ میں تسلسل کے ساتھ بہترین کھیل پیش کرتے رہے ہیں اور ان کی موجودگی میں پاکستانی ٹیم کو ایک موثر بیٹسمین ہی نہیں بلکہ ڈاکٹروں کے مطابق انجری سے بحالی کیلئے دو ہفتے کا وقت درکار ہوگا،سلیکٹرز بھی کسی نتیجے پر نہیں پہنچ سکے کہ ابھرتے ہوئے بیٹسمین کو واپس طلب کرلیں یا پھر انہیں ون ڈے سیریز میں کھلانے کا چانس لیں، ذرائع ایک اچھا بائیں ہاتھ کا اسپن بالر بھی مل جاتا ہے ۔محمد حفیظ کا ایکشن ایک بار پھر رپورٹ ہونے کے بعد تو حارث سہیل کی اہمیت اور بھی بڑھ گئی ہے جنہیں سری لنکا کیخلاف ون ڈے سیریز میں اپنا دہرا کردار نبھانا ہوگا۔ سری لنکا کیخلاف سیریز کے پہلے ٹیسٹ میں حارث سہیل کو چانس نہیں مل سکا جو پاکستان نے دس وکٹوں سے جیت لیامگر آنے والے دنوں میں ان کی ضرورت بہت زیادہ محسوس ہو گی۔ پاکستانی کرکٹ بورڈ کے قریبی ذرائع کے مطابق حارث سہیل کو ڈاکٹروں نے انجری سے مکمل نجات کیلئے کم از کم دو ہفتے تک آرام کی ہدایت کی ہے لیکن دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ ٹیم انتظامیہ کی طرح سلیکٹرز بھی تاحال یہ فیصلہ کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکے ہیں کہ حارث سہیل کو وطن واپس طلب کر لیں یا پھر اس بات کا انتظار کریں کہ انہیں انجری سے نجات کے بعد سری لنکا کیخلاف ون ڈے سیریز میں آزمایا جائے ۔قومی چیف سلیکٹر نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ حالیہ عرصے میں بنگلہ دیش کی بھارت کیخلاف کامیابی نے پاکستانی ٹیم کیلئے حالات کو مزید چیلنجنگ بنا دیا ہے جس کیلئے آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں شرکت پہلے سے بھی زیادہ مشکل ہو گئی ہے کیونکہ ایونٹ میں رینکنگ کے لحاظ سے آٹھ بہترین ٹیمیں ہی شرکت کر سکیں گی جبکہ پاکستان کی موجودہ پوزیشن نویں ہے اور اسے ویسٹ انڈیز سے آٹھویں پوزیشن چھیننے کیلئے لازم ہے کہ وہ سری لنکا کیخلاف ون ڈے سیریز میں کامیابی کو یقینی بنائے ۔قومی چیف سلیکٹر ہارون رشید کا کہنا ہے کہ ٹیسٹ سیریز ختم ہو جانے کے بعد ان کی تمام تر توجہ کا مرکز سری لنکا کیخلاف پانچ ون ڈے میچز کی سیریز ہو گی کیونکہ اس میں کامیابی کے بعد ہی آئی سی سی ون ڈے رینکنگ میں بہتری پیدا کی جا سکتی ہے ۔حارث سہیل کی انجری کو ایک بدقسمتی قرار دیتے ہوئے ہارون رشید کا کہنا تھا کہ وہ بھی اس بات کے منتظر ہیں کہ باصلاحیت بیٹسمین جلد ہی انجری سے نجات حاصل کر لے تاکہ ون ڈے سیریز میں اس کے جوہروں کو استعمال کیا جا سکے ۔ان کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیشی ٹیم کی بھارت کیخلاف حالیہ کامیابیاں ان کیلئے حیران کن نہیں ہیں کیونکہ بنگال ٹائیگرز پاکستان کیخلاف سیریز کے دوران بھی اس بات کی نشاندہی کر چکے ہیں کہ انہوں نے اپنے کھیل میں ماضی کے مقابلے میں کافی بہتری پیدا کی ہے ۔ ہارون رشید کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیش کے تجربہ کار کھلاڑیوں میں بے پناہ اعتماد دیکھنے میں آ رہا ہے جن کی ذہنیت میں فتح کا لفظ شامل ہو گیا ہے جبکہ ان کے کچھ نئے کھلاڑی بھی ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ کی سطح پر اپنی ٹیم کو بہترین حوصلہ دے رہے ہیںجس کی وجہ سے انہیں بہترین نتائج حاصل ہو رہے ہیں۔واضح رہے کہ بنگلہ دیش نے بھارت کیخلاف بہترین کھیل کی بدولت 93پوائنٹس لے کر خود کو رینکنگ میں ساتویں نمبر پر پہنچا کر آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی دو ہزار سترہ کیلئے کوالیفائی کرا لیا ہے اور اب ویسٹ انڈیز کی ٹیم پاکستان کی راہ میں آخری رکاوٹ کے طورپر موجود ہے جسے پاکستان پر ایک پوائنٹ کی برتری حاصل ہے لیکن خوش قسمتی کا اہم ترین پہلو یہ ہے کہ پندرہ ستمبر کی کٹ آف ڈیٹ تک ویسٹ انڈیز کا کوئی ون ڈے میچ شیڈول نہیں ہے اور پاکستان کیلئے اب واحد ہدف ویسٹ انڈیز کو اس کی آٹھویں پوزیشن سے نیچے کھسکانا ہے اور ظاہر سی بات ہے کہ اس کیلئے سری لنکا کو ہرانا ہی نہیں ایک بہترین اسکواڈ کی تشکیل بھی لازمی ہوگا اور حارث سہیل کی عدم موجودگی اس مشکل ٹاسک کو مزید کٹھن بنا سکتی ہے ۔

 

Check Also

#paksa #paksa.co.za بابراعظم نے دنیا بھر کے بلے بازوں پو پچھاڑ دیا ، سب سے بڑا اعزاز اپنے نام کر لیا

دبئی (آن لائن )پاکستان نے گزشتہ روز آسٹریلیا کو ٹی ٹوینٹی میچ میں شکست دے …