Home » Pakistani Headlines » حکمرانوں کا قبلہ مکہ نہیں واشنگٹن ہے،اسلام آباد میں امریکی یاروں اور بھارتی وفاداروں کی موجودگی میں امن اور خوشحالی نہیں آ سکتی :سینیٹر سراج الحق

حکمرانوں کا قبلہ مکہ نہیں واشنگٹن ہے،اسلام آباد میں امریکی یاروں اور بھارتی وفاداروں کی موجودگی میں امن اور خوشحالی نہیں آ سکتی :سینیٹر سراج الحق

siraj ul haq

لاہور(نیوز ڈیسک)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں فساد کا مرکز اسلام آباد ہے ،جب تک اسلام آباد میں امریکی وفادار اور بھارتی یار بیٹھے ہیں امن اور خوشحالی نہیں آسکتی،ملک میں جمہوریت نہیں بادشاہت ہے جبکہ ایک اسلامی ریاست میں بادشاہت اور آمریت کی کوئی گنجائش نہیں، حکمرانوں کا قبلہ مکہ نہیں واشنگٹن ہے ، امریکی احکامات کیلئے یہ اللہ تعالیٰ اور اس کے رسول ﷺکے احکامات کو پس پشت ڈال دیتے ہیں۔

حکمرانوں کو عوامی مسائل اور پریشانیوں سے کوئی غرض نہیں۔ادویات مہنگی اور شراب سستی ہے ،لاکھوں لوگ فٹ پاتھوں پر سونے پر مجبور ہیں ،یتیموں مسکینوں اور بیواؤں کا کوئی پرسان حال نہیں، حالانکہ مستحق اور نادار لوگوں کی کفالت کی ذمہ داری ریاست اور حکومت کی ہے۔

اتفاق ٹاؤن لاہور سات روزہ’’ فہم قرآن کلاس ‘‘کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ سود کرپشن اور کمیشن نے پورے نظام کو تباہی سے دوچار کردیا ہے ،کرپٹ ،لینڈاور ڈرگ مافیا کو اقتدار کے ایوانوں سے نکال کر جیلوں میں بند کرنے کی ضرورت ہے۔وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم نے معاشرے میں مایوسی اور بے چینی کو جنم دیا ہے۔لوگوں کے حقوق غصب کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ دولت کی غیر منصفانہ تقسیم سے امیر امیر تر اور غریب غریب تر ہورہاہے۔عدالتی نظام سے لوگوں کا اعتماد اٹھ چکاہے ،کسی غریب کو تھانے کچہری اور عدالت سے انصاف نہیں ملتا جبکہ بااثر ملزمان کو کوئی پوچھنے والا نہیں ،انہوں نے کہا کہ اب تو حال یہ ہے کہ لوگ سول عدالتوں سے مایوس ہوکر فوجی عدالتوں سے انصاف مانگ رہے ہیں لیکن فوجی عدالتیں بھی مسئلے کا حل نہیں ،انہوں نے کہا کہ عام آدمی کو اس وقت انصاف میسر آسکتا ہے جب ملک میں قرآن کے مطابق فیصلے ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ یہ بدقسمتی ہے کہ آزادی کے 70سال بعد بھی ہم مغرب کی غلامی سے نہیں نکل سکے۔تعلیم ،معیشت اور عدالتوں میں ابھی تک انگریزوں کا نظام ہے اور قومی زبان کے بجائے انگریزی ذریعہ تعلیم ہے۔ہم چیف جسٹس کے ہاتھ میں انگریز کے قانون کی بجائے اللہ کی کتاب قرآن دیکھنا چاہتے ہیں۔جب قرآن پر فیصلے ہونگے تو کوئی وڈیرہ ،جاگیردار اور سرمایہ دار کسی غریب کا استحصال نہیں کرسکے گا۔انہوں نے کہا کہ ظلم و جبر کا شکار غریب اسٹیٹس کو کے خاتمہ کیلئے جماعت اسلامی کے پلیٹ فارم پر متحد ہوجائیں۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ لاہور جیسے شہر میں دن دیہاڑے 14معصوم سیاسی کارکنوں کو شہید کردیا گیا مگر دوسال بعد بھی انہیں انصاف نہیں ملا اور قاتلوں کو گرفتا ر کرکے نشان عبرت نہیں بنایا گیا۔انہوں نے کہا کہ یہ اندھیر نگری ہے ،جب ظلم حد سے بڑھتا ہے تو پھر پورے معاشرے کو اس کی سزا بھگتنا پڑتی ہے۔حکمرانوں کی گڈ گورنس کے تمام دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ہیں۔14افراد کے قاتلوں کا فیصلہ نہ ہونا نظام کی ناکامی کا ثبوت ہے۔حکمران اللہ کے غضب سے ڈریں اور قاتلوں کو گرفتار کرکے انہیں قرار واقعی سزا دی جائے۔

Check Also

معروف ٹی وی کمپیئر طارق عزیز 84 برس کی عمر میں‌ انتقال کر گئے

لاہور: معروف ٹی وی کمپیئر طارق عزیز انتقال کر گئے، انہوں نے فلموں میں بھی …