Home » Interesting News » دنیا کا وہ ملک جس کے شہریوں نے ایمانداری کی ایسی مثال قائم کردی کہ جان کر یقین کرنا مشکل ہوجائے

دنیا کا وہ ملک جس کے شہریوں نے ایمانداری کی ایسی مثال قائم کردی کہ جان کر یقین کرنا مشکل ہوجائے

honest

ٹوکیو (مانیٹرنگ ڈیسک) کسی قوم کی اصل طاقت اس کا کردار ہوتا ہے، اور اگر آپ واقعی کوئی صاحب کردار قوم دیکھنا چاہتے ہیں تو جاپانیوں کو دیکھ لیجئے۔ اس قوم نے دیانتداری میں ساری دنیا کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ جاپانیوں کی دیانتداری کا اندازہ آپ اس بات سے کرسکتے ہیں کہ گزشتہ ایک سال کے دوران صرف ٹوکیو شہر کے لوگوں نے لاوارث ملنے والے 3.7ارب یوان (تقریباً سوا تین ارب پاکستانی روپے)پولیس کے حوالے کئے۔ یعنی آپ کہہ سکتے ہیں کہ جس کو جہاں بھی رقم لاوارث ملی تو اس نے اپنی جیب میں ڈالنے کی بجائے اسے پولیس کے حوالے کیا تاکہ اسے اس کے حقدار تک پہنچایا جاسکے۔ ٹوکیو میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ اس رقم میں سے تقریباً 3چوتھائی مالکان کو تلاش کرکے ان تک پہنچادی گئی۔

جاپان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق جاپانیوں میں عام لین دین کے لئے نقد رقم استعمال کرنے کا رجحان بہت زیادہ ہے۔ سال 2015ءکے اعدادوشمار کے مطابق تقریباً 103 کھرب یوان کیش زیر گردش تھا، جو کہ جاپان کے سالانہ آﺅٹ پٹ کا تقریباً 19 فیصد ہے۔ یہ شرح دنیا کے 18 ترقی یافتہ ترین ممالک میں سب سے زیادہ ہے۔ لاکھوں کروڑوں کے لین دین کے لئے بھی لوگ کیش ساتھ اٹھائے پھرتے ہیں، اور انہیں کوئی خوف نہیں ہوتا کہ کوئی ان سے یہ رقم چھین لے گا۔ اگر بدقسمتی سے کسی کی رقم کہیں کھو بھی جائے تو جلد ہی کوئی شہری اسے پولیس تک پہنچادیتا ہے۔

 جاپانی دارالحکومت ٹوکیو، جس کا شمار دنیا کے گنجان آباد ترین شہروں میں ہوتا ہے، میں یہ منظر عام دیکھنے کو ملتا ہے کہ لوگ رقم سے بھرے تھیلے اٹھائے کہیں بھی گھومتے پھرتے نظر آتے ہیں۔ یہاں کسی کو خدشہ نہیں ہوتا کہ اسے لوٹ لیا جائے گا۔ آپ کسی بڑے ریسٹورنٹ میں جائیںتو یہ دیکھ کر حیران ہوں گے کہ لوگ اپنی جگہ ریزرو رکھنے کے لئے میز پر اپنا مہنگا ترین فون چھوڑ کر چلے جاتے ہیں۔ انہیں قطعاً یہ ڈر نہیں ہوتا کہ واپس آئیں گے تو فون غائب ہوگا۔ آپ کسی دفتر، دکان یا حتیٰ کہ عوامی پارک میں کوئی مہنگی چیز بھول جائیں یا چند روپے کا قلم، یہ جسے بھی ملے گا وہ اسے فوری طور پر پولیس کے پاس پہنچائے گا، اور آپ امید کرسکتے ہیں کہ جلد ہی یہ چیز آپ کے پاس واپس پہنچ جائے گی۔
جاپانیوں کی یہ حیرت انگیز دیانتداری ان کے کلچر اور اخلاقی تعلیم کا نتیجہ بتائی جاتی ہے۔ جاپانی سکولوں میں بچوں کو شروع سے ہی اخلاقیات کی تعلیم دی جاتی ہے۔ بچوں کو یہ سکھایا جاتا ہے کہ اگر کسی کی کوئی شے کھو جائے تو ان کے لئے کس قدر پریشانی پیدا ہوجاتی ہے، لہٰذا وہ آغاز سے ہی اس معاملے میں حساس واقع ہوتے ہیں۔ سابق پولیس افسر اور اب کانسائی یونیورسٹی میں انٹرنیشنل سٹڈیز کے پروفیسرز توشی ناری نشی یوکا نے بتایا کہ اسی تعلیم کا نتیجہ ہے کہ کسی ننھے بچے کو سڑک پر گرا سکہ ملے تو وہ اسے جیب میں ڈالنے کی بجائے پولیس اہلکار کے حوالے کرتا ہے۔
جاپان میں کھوئی ہوئی اشیاءکے متعلق بنائے گئے قانون کے مطابق کسی بھی شخص کو کوئی لاوارث شے یا رقم ملے تو پولیس کے حوالے کرنا فرض ہے۔ اگر رقم کا مالک مل جائے تو لوٹانے والے کو 5 سے 20 فیصد انعام دیا جاتا ہے، اور اگر تین ماہ کے دوران کوئی دعویدار سامنے نہ آئے تو تمام رقم لوٹانے والے کو بطور انعام دے دی جاتی ہے۔

 #paksa
#paksa.co.za

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …