Home » Interesting News » شام میں خوفناک خانہ جنگی کے بعد اب کون سا ملک اس کے تیل و گیس کے تمام ذخائر کا کنٹرول سنبھالے گا؟ ایسا نام سامنے آگیا کہ کوئی مسلمان سوچ بھی نہ سکتا تھا، امریکہ نہیں بلکہ۔۔۔

شام میں خوفناک خانہ جنگی کے بعد اب کون سا ملک اس کے تیل و گیس کے تمام ذخائر کا کنٹرول سنبھالے گا؟ ایسا نام سامنے آگیا کہ کوئی مسلمان سوچ بھی نہ سکتا تھا، امریکہ نہیں بلکہ۔۔۔

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شام میں سالہا سال کی خونریز جنگ کے بعد اب ملک کے تیل و گیس کے ذخائر ایک ایسے ملک کے قبضے میں جانے کا انکشاف سامنے آ گیا ہے کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا۔ ویب سائٹ آئل پرائس کی رپورٹ کے مطابق یہ ملک امریکہ نہیں بلکہ روس ہے۔ گزشتہ ماہ شام اور روس کے مابین انرجی کواپریشن فریم ورک کا معاہدہ ہوا ہے جس میں طے پا گیا ہے کہ اب روس کو شام میں تیل اور گیس پیدا کرنے کے بلا شرکتِ غیرے حقوق حاصل ہوں گے۔ اس معاہدے میں جنگ سے ہونے والی تباہ کاریوں کے مداوے، انفراسٹرکچر کی بحالی، انرجی ایڈوائزر سپورٹ و دیگر پہلوؤں پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔
شام میں خونریز خانہ جنگی کے دوران تیل کی پیداوار 3لاکھ 80ہزار بیرل یومیہ کے لگ بھگ رہی۔ کچھ عرصے سے یہ انتہائی کم چند ہزار بیرل تک محدود ہو چکی ہے۔ 2002ء میں جنگ کی تباہ کاریوں سے قبل یہ 6لاکھ 77ہزار بیرل یومیہ تھی۔اگرچہ ملک میں شدت پسند تنظیم داعش کو شکست ہو چکی ہے اور اس کے شدت پسند زیرزمین جا چکے ہیں لیکن اب بھی شام میں تیل کی پیدا وار 14سے 15ہزار بیرل یومیہ ہو رہی ہے۔خانہ جنگی کے باعث شام میں گیس کی پیداوار میں بھی ریکارڈ کمی ہوئی اور یہ 8ارب کیوبک میٹر سالانہ سے کم ہو کر ساڑھے تین ارب کیوبک میٹر سالانہ کی سطح پر آ گئی۔ حالیہ سالوں میں اس میں مزید کمی واقع ہوئی اور اس کی پیداوار 2002ء کی نسبت 90فیصد کم ہو گئی۔ اب مذکورہ معاہدے کے تحت شام کے تیل و گیس کے تمام ذخائر شامی حکومت کے کنٹرول سے نکل کر روس کے قبضے میں چلے گئے ہیں۔

 

#paksa

#paksa.co.za

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …