Home » Pakistani Headlines » وفاقی دارالحکومت میں تاریخ کے پہلے بلدیاتی انتخابات کیلئے پولنگ جاری،سکیورٹی کے سخت انتظامات

وفاقی دارالحکومت میں تاریخ کے پہلے بلدیاتی انتخابات کیلئے پولنگ جاری،سکیورٹی کے سخت انتظامات

news-1448114452-9129_large (1)

اسلام آباد :  وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں اقتدار کی جنگ جاری ہے،حکمران جماعت مسلم لیگ ن ،تحریک انصاف ، پاکستان پیپلز پارٹی ، آزاد امیدواروں اور 26سیاسی جماعتوں کے کارکنان اپنے اپنے امیدوار وں کو کامیاب کرانے کیلئے پولنگ سٹیشنز کے باہر قطاریں بنائے کھڑے ہیں ۔50 یونین کونسلوں میں پولنگ کا عمل صبح سات سے شام ساڑھے پانچ بجے تک بغیر کسی وقفے کے جاری رہے گا۔640پولنگ اسٹیشنز پر 2156پولنگ بوتھ قائم کیئے گئے ہیں ۔ہریونین کونسل 6وارڈز پر مشتمل ہے ،24سیاسی جماعتوں کے امیدوار مدمقابل ہیں ۔
الیکشن کمیشن نے اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات کیلئے ایک کنٹرول روم بھی قائم کیا ہے۔
دارالحکومت میں ووٹرز کی کل تعداد چھ لاکھ 76 ہزار سے زائد بتائی گئی ہے۔ اعدادوشمار کے مطابق 2400 سے زائد امیدوار چیئرمین، وائس چیئرمین اور کونسلرز کی نشستوں کے لیے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔دارالحکومت کے تعلیمی اداروں میں تعطیل ہے جبکہ سرکاری دفاتر کے ملازمین کو دن دو بجے چھٹی دے دی جائےگی۔الیکشن کمیشن کے مطابق سکیورٹی کی فراہمی کے لیے پولیس کی معاونت کے لئے فوج، رینجرز اور ایف سی کے جوان تعینات کیے گئے ہیں۔انتخابات کے موقع پر 625 فوجی جوانوں اور رینجرز کے 700 اہلکاروں کے علاوہ پولیس بھی تعینات کی گئی ہے جبکہ امن وامان برقرار رکھنے کیلئے ایف سی کے 1000 اہلکار بھی علاقے میں موجود ہیں۔حساس ترین پولنگ اسٹیشنز پر ایک رینجر اور 15 پولیس اہلکار تعینات کیے گئے جبکہ حساس پولنگ اسٹیشن پر 7پولیس اہلکارمامور ہیں۔الیکشن کمیشن کے مطابق فوج بھی سریع الحرکت فورس کے طور پر موجود رہے گی۔تفصیلاتکے مطابق وفاقی دارلحکومت میں تاریخ میں پہلی مرتبہ ہونے والے بلدیاتی انتخابات کا میدان سج چکا ہے ۔شہر میں نون اور جنون کی جنگ زیادہ توجہ کا مرکز بنی ہوئی ہے ۔نجی ٹی وی چینلز کے مطابق پاکستان تحریک انصاف،پاکستان مسلم لیگ ن کے علاوہ پیپلز پارٹی سمیت کل 24جماعتوں کے امیدوار میدان میں ہیں جبکہ سب سے زیادہ تعداد میں 972 آزاد امیدوار بھی میدان میں اترے ہوئے ہیں ۔پاکستان مسلم لیگ ن 506پی ٹی آئی 479کے ساتھ کل 2405امیدوارانتخابات میں کامیابی کیلئے پنجہ آزمائی کر رہے ہیں ۔بلدیاتی انتخابات کے گزشتہ مرحلوں کی طرح اسلام آبا میں جاری الیکشن میں بھی الیکشن کمیشن کی جانب سے کچھ غلطیاں سامنے آئی ہیں جن میں غلط انتخابی نشانات کی چھپائی ، پولنگ میں تاخیر و دیگر بے قاعدگیاں شامل ہیں۔غیر جانبدار تجزیہ کاروں کے مطابق اسلام آباد میں رورل یونین کونسلز میں مسلم لیگ ن اور آزاد امیدواروں کی اکثریت کامیاب ہو گی اور ان میں زیادہ تعدا د آزاد امیدواروں کی سامنے آسکتی ہے ،جبکہ اربن علاقوں میں آزاد امیدواروں کوکم اورپارٹی سطح پر امیدواروں کو اکثریت میں سیٹیں ملیں گی جس میں پہلے نمبر پر تحریک انصاف ،دوسرے پر مسلم لیگ ن اور پھر جماعت اسلامی اور پاکستان پیپلز پارٹی بالتریب آئیں گی۔ا?زاد تجزیہ کاروں کے مطابق کل سیٹوں کی تعداد کا موازنہ کیا جائے تو اسلام آباد کا مئیر بنانے میں آزاد امیدواروں کا بڑا کردار ہو گا۔رورل ایریا میں جتنے بھی آزاد امیدوار میدان میں ہیں وہ زیادہ تر برادری کی سطح پر الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں اور زیادہ تر ن لیگ کا ووٹ ہی برادری ازم پر قربان ہو گا جس سے پاکستان تحریک انصاف یا دیگر جماعتوں کو زیادہ نقصان نہیں ہو گا۔دیکھنے میں یہ بھی آیا ہے کہ مسلم لیگ ہو یا دیگر اور جماعتوں کے امیدوار جو برادری ،قبیلے کی سطح پر الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں وہ برادری ازم کو ہی ترجیح دے رہے ہیں۔ترنول ،گولڑہ ،بھارہ کہو،نورپور شاہاں،ترلائی ،ترامڑی ،سہالہ ،کھنہ ڈاک سمیت دیگر دیہی علاقوں میں جو آزاد امیدوار ہیں انکی پوزیشن پارٹی ٹکٹ سے قدرے بہتر ہے دیکھا یہ گیا ہے کہ وہ برادری اور ذاتی جان پہچان پر الیکشن لڑ رہے ہیں۔تجزیہ کاروں کے مطابق اسلام ا?باد میں ہونے والے بلدیاتی انتخاب میں پہلے دو مرحلوں کی طرح یہاں بھی مسلم لیگ ن میں دو دھڑے قائم ہیں۔ آزاد حیثیت سے الیکشن میں حصہ لینے والے امیدواروں کی پوزیشن ن لیگی ٹکٹ ہولڈرز سے قدرے بہتر نظر آرہی ہے کیونکہ آزاد حیثیت سے پرانے اور نظریاتی لیگی کارکنان حصہ لے رہے ہیں اور جن کو ٹکٹ دی گئی ہے وہ زیادہ مضبوط نہیں ہیں۔

Check Also

معروف ٹی وی کمپیئر طارق عزیز 84 برس کی عمر میں‌ انتقال کر گئے

لاہور: معروف ٹی وی کمپیئر طارق عزیز انتقال کر گئے، انہوں نے فلموں میں بھی …