Home » Interesting News » وہ عراقی شخص جس نے امریکی صدر جارج ڈبلیو بش کو جوتا مارا تھا اب کیا کرنے جارہا ہے؟ عراق سے اہم خبر آگئی

وہ عراقی شخص جس نے امریکی صدر جارج ڈبلیو بش کو جوتا مارا تھا اب کیا کرنے جارہا ہے؟ عراق سے اہم خبر آگئی

بغداد(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر کو جوتا مار کر سکیورٹی اہلکاروں سے جوتے کھانے والے عراقی صحافی منتظر زیدی کا خیال ہے کہ اب ان کے ’عظیم کارنامے‘ کا صلہ ملنے کا وقت آن پہنچا ہے۔ غالباً وہ سمجھ رہے ہیں کہ امریکی صدر کو جوتا مارنے کا انعام ملک کی صدارت بھی ہو سکتی، اور شاید اسی لئے وہ صدارتی الیکشن میں بطور امیدوار سامنے آ گئے ہیں۔

یہ 2008 کی بات ہے کہ جب بغداد میں ایک پریس کانفرنس کے دوران منتظر زیدی نے اپنا جوتا اتار کر صدر جارج ڈبلیو بش کو دے مارا تھا۔ صدر بس اس جوتے سے بال بال بچے۔ جب سکیورٹی اہلکار منتظر زیدی کو قابو کرنے کے لئے آگے بڑھ رہے تھے تو انہوں نے دوسرا جوتا بھی اتار اور امریکی صدر کو دے مارا، مگر اس بار بھی وہ بچ نکلنے میں کامیاب رہے۔ دریں اثناء سکیورٹی اہلکار ان تک پہنچ چکے تھے۔ بس پھر کیا تھا، انہیں قابو کر کے خوب درگت بنائی گئی۔ وہ نو ماہ تک جیل میں بھی رہے لیکن 2009 میں رہا ہوتے ہی ملک سے باہر چلے گئے۔ اس کے بعد وہ 2011 میں واپس آئے اور جنگ سے متاثرہ بچوں کے لئے ایک فاؤنڈیشن قائم کی، لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ وہ سیاسی میدان میں چھلانگ لگا رہے ہیں۔

#paksa

#paksa.co.za

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …