Home » Interesting News » وہ نوجوان جواپنا دل ڈیڑھ سال تک بستے میں ڈال کر پھرتا رہا

وہ نوجوان جواپنا دل ڈیڑھ سال تک بستے میں ڈال کر پھرتا رہا

bagواشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک )دل کے بنا زندگی کا تصور بھی محال ہے لیکن امریکی ریاست مشی گن میں ایک ایسا بھی شخص ہے جس کا دل اس کے سینے میں نہیں دھڑکتا ۔25سالہ سٹین لارکن اور ان کے بھائی ڈومینق دل کی بیماری میں مبتلا تھے دونوں کے دل اس قدر کمزور ہو چکے تھے کہ ڈاکٹرز کو انہیں نکالنا پڑا کیونکہ ہارٹ ٹرانسپلانٹ کے لیئے وقت ناکافی تھا اس لئے ان کو مصنوعی دل لگا دیئے گئے۔

اس حوالے سے بات کرتے ہوئے ٹرانسپلانٹ کرنے والے مشی گن یونی ورسٹی کے ڈاکٹرجوناتھن ہافٹ کا کہنا تھا کہ جب ہم ان سے انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں ملے تو دونوں بھائی اس قد رکمزور تھے کہ فوری ٹرانسپلانٹ کے سوا کوئی چارہ نظر نہ آیا تا ہم وقت کی کمی اور فوری انتظامات کی عدم دستیابی کے باعث ان کے دل نکال کر ایک ڈیوائس لگا دی گئی تاکہ ان کی جان بچائی جاسکے۔یہ ڈیوائس ایک بیگ میں رکھ کردونوں بھائیوں کے کاندھوں پر بستے کی طرح لٹکا دی گئیں۔

ڈومینق کو ڈیوائس نصب ہونے کے تھوڑے ہی دنوں بعد ایک ڈونر مل گیا جس کی وجہ سے اس کا ٹرانسپلانٹ کر دیا گیا۔دوسری جانب لارکن کوڈونر نہ ملنے کے باعث تاحال ڈیوائس پر انحصار کرنا پڑ رہا ہے جو کہ وہ تندرستی کے ساتھ کر رہے ہیں۔ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ یہ اس نوجوان کی بھی ایک خوبی ہے کہ وہ گزشتہ ڈیڑھ سال سے اس بیگ کے ساتھ جی رہا ہے۔
ڈاکٹرز کے مطابق اس ڈیوائس کا نام سن کارڈیا(SynCardia ) ہے جس کا وزن 6کلوگرام بتایا گیا۔

Check Also

تیزی سے پیٹ کی چربی پگھلانے والی 4 ورزشیں

دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران اگر آپ کا بھی وزن بڑھ گیا …