Home » Interesting News » 35سال کی عمر کے بعد بچہ پیدا کرنے کا انتہائی تشویشناک نقصان سائنسدانوں نے بے نقاب کردیا

35سال کی عمر کے بعد بچہ پیدا کرنے کا انتہائی تشویشناک نقصان سائنسدانوں نے بے نقاب کردیا

اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) بعض خواتین کی شادی ہی زیادہ عمر میں ہوتی ہے لیکن بعض جلد شادی ہونے کے باوجود کیریئر یا دیگر وجوہات کی بناءپر زیادہ عمر میں جا کر بچے پیدا کرنے کو ترجیح دیتی ہیں۔ اب ایسی زائد العمر خواتین کے ہاں پیدا ہونے والی لڑکیوں کے متعلق سائنسدانوں نے خوفناک انکشاف کر دیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق نئی تحقیق میں سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ ”جو خواتین 35سال سے زائد عمر میں بچہ پیدا کریں اور ان کے ہاں لڑکی پیدا ہو تو آگے چل کر اس لڑکی کے بانجھ ہونے کے امکانات نوعمر خواتین کے ہاں پیدا ہونے والی لڑکیوں کی نسبت 40فیصد زیادہ ہوتے ہیں۔“
کینیڈا کی مک گل یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے اس تحقیق میں 43ہزار ماﺅں کی عمر اور ان کے ہاں پیدا ہونے والی بیٹیوں کی افزائش نسل کی شرح کا تجزیہ کرکے نتائج مرتب کیے ہیں۔ تحقیق کاروں کا کہنا تھا کہ ”35سال سے زائد عمر کی ماﺅں کا تولیدی نظام ان کے پیٹ میں پرورش پانے والی بیٹیوں کی افزائش نسل کی صلاحیت پر انتہائی منفی اثرات مرتب کرتا ہے۔اس کی ایک وجہ رحم مادر کا زائد العمر ہونا ہو سکتا ہے۔“

 

#paksa

#paksa.co.za

Check Also

#paksa #paksa.co.za چینی انجینئر رائیونڈ سے پسند کی لڑکی بیاہ کر لے گیا

لاہور، رائیونڈ (ویب ڈیسک) چینی انجینئر رائے ونڈ سے پسندکی لڑکی بیاہ لے گیا ،شادی …