Home » Interesting News » #paksa #paksa.co.za ’جیل میں تو اس کی موجیں لگ جائیں گی‘ عدالت نے جیل بھیجنے کی بجائے مجرم کو سزائے موت دے دی ، جیل کیوں نہیںبھیجا؟ ایسی شرمناک ترین وجہ سامنے آگئی کہ دنیا میں ہنگامہ برپا ہوگیا

#paksa #paksa.co.za ’جیل میں تو اس کی موجیں لگ جائیں گی‘ عدالت نے جیل بھیجنے کی بجائے مجرم کو سزائے موت دے دی ، جیل کیوں نہیںبھیجا؟ ایسی شرمناک ترین وجہ سامنے آگئی کہ دنیا میں ہنگامہ برپا ہوگیا

واشنگٹن(نیوز ڈیسک)مجرم کی سزا کا تعین کرتے ہوئے عدالت اس کے جرم کو مدنظر رکھتی ہے لیکن امریکا کی ایک عدالت نے قتل کے مجرم کی ایک جنسی عادت کے باعث اس کی عمر قید کا فیصلہ تبدیل کر دیا اور اسے موت کی سزا دے ڈالی۔

دی میٹرو کے مطابق چارلس رائنز نامی شخص نے ریاست ساﺅتھ ڈکوٹا کی ایک دکان میں ڈکیتی کے دوران ایک ملازم کو قتل کر دیا تھا۔ جب اس کا مقدمہ چل رہا تھا تو جج اس بات پر بہت زیادہ توجہ دیتے نظر آئے کہ وہ ہم جنس پرست تھا۔ سپریم کورٹ میں افشاءکی جانے والی ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایک جج نے دوسرے سے کہا کہ ”اگر ہم اسے ایک ایسی جیل میں بھیجتے ہیں جہاں اس کے گرد مرد ہی مرد ہوں گے تو دوسرے لفظوں میں ہم اسے ایسی جگہ بھیج رہے ہیں جہاں یہ جانا چاہتا ہے۔ “ ایک اور جج کا کہنا تھا کہ ”یہ وہاں دیگر قیدیوں کے ساتھ جنسی تعلقات پیدا کرے گا اور یہ صورتحال اس کے لئے سزا کی بجائے عیاشی جیسی ہو گی۔“ ہم جنس پرستی کے خلاف سخت جذبات رکھنے والے ان ججز نے اسی نوعیت کی بحث وتمحیص کے بعد چارلس کی عمر قید کو موت کی سزا میں بدل دیا۔

حال ہی میں چارلس کی اپیل امریکی سپریم کورٹ میں سنی گئی لیکن وہاں بھی موت کی سزا برقرار رکھی گئی۔ امریکی میڈیا اور خصوصاً قانونی حلقوں میں اس فیصلے پر ایک ہنگامہ برپا ہے۔ ماہرین قانون کا کہنا ہے کہ امریکی عدلیہ کی تاریخ میں شاید ہی کبھی کسی جج کے ذاتی جذبات کیس کے قانونی پہلو پر اس طرح حاوی ہوئے ہوں جس طرح اس کیس میں ہوا۔ ماتحت عدالت کے فیصلے کے بعد سپریم کورٹ کی جانب سے قتل کی سزا برقرار رکھنے کے فیصلے کو مزید قابل افسوس بات قرار دیا جا رہا ہے۔

Check Also

#paksa #paksa.co.za چینی انجینئر رائیونڈ سے پسند کی لڑکی بیاہ کر لے گیا

لاہور، رائیونڈ (ویب ڈیسک) چینی انجینئر رائے ونڈ سے پسندکی لڑکی بیاہ لے گیا ،شادی …